Thread Rating:
  • 0 Vote(s) - 0 Average
  • 1
  • 2
  • 3
  • 4
  • 5
Thread Contributor: MujeebFiraq - Raat ajab aasaib zadah sa mausam thaa ( رات عجب آسیب زدہ موسم سا تھا )
#1
Raat ajab aasaib zadah sa mausam thaa
Apna hona , aur na hona , mubham thaa

Aik gul e tanhaaii tha jo humdum thaa
Khaar o Ghubaar ka sarmaaya bhi kam kam thaa

Aankh se kaT kaT jaaty thy saary manzar
Raat se rang e deedah e HairaN barham thaa

Jis aalam ko hoo ka aalam kehty haiN
woh aalam tha , aur woh aalam e paiham thaa

Khaar Khameeda sar thy , bagooly be awaaz
SeHra meN bhee ajj kis ka matam thaa

roshniyaN aTraaf meN , zehra roshan then
aainy meN aks hi tera madaham tha
[-] The following 1 user says Thank You to Mujeeb for this post:
  • admin
Reply
#2
رات عجب آسیب زدہ سا موسم تھا
اپنا ہونا، اور نا ہونا ، مبہم تھا

ایک گلِ تنہائی تھا ، جو ہمدم تھا
خار و غبار کا سرمایہ بھی کم کم تھا

آنکھ سے کٹ کٹ جاتے تھے سارے منظر
رات سے رنگِ دیدہ حراں برہم تھا

جس عالم کو ہُو کا عالم کہتے ہیں
وہ عالم تھا ، اور وہ عالم پیہم تھا

خار خمیدہ سر تھے ، بگولے بے آواز
صحرا میں بھی آج کس کا ماتم تھا

روشنیاں اطراف میں زہراؔ روشن تھیں
آئینے میں عکس ہی تیرا مدھم تھا
Reply


Forum Jump:


Users browsing this thread: 1 Guest(s)